Raping our Own, By Dr RazaHaider

11039306_1122718667745158_8582116498402377492_n

We as nation are stricken under situation where succession remains the prerogative of string attached to the previous nail only.

We rely on culture and sanctify sculpture thus defying our own silhouette by self inflicted scar therefore parting own peace in to piece as farther and far.

We deny ethnicity and race but we nullify our own verb by refusing selection and election on similar stature.

We promulgate equality but debar similarity.

This difference in totality sacrifice our morality giving life and ledger to cruelty thus infidelity as ultimate fatality.

We slogan nationalism but jingle provincialism.

We formulate nation by aggregation of different and diversified civilization but still makes segregation as core element of presentation.

We deny version of ethnic origin yet we testify it in racial edition.

We deduce as one nation but produce relation as key to succession in every inauguration and celebration thus making nation in to diversified presentation as masses of different linguistic denomination.

I am astonished over the presentation of this nation that divides one in to unit and unit in to entity of separate culture and civilization with name and call as Punjabi, Sindhi, Baloch and Pakhtoon and so on.

In spite of division we are unified within diversified though we together nullify what we testify as nation.

We treat as mistreat and cheat as deed if at all we need for feed digging own field and ground like Raping our own.

We have no law but flaw that actually behaves like a claw from where punishment is a bylaw for poor and as in-law for the rich.

We believe in unity, faith and discipline yet we denounce others faith and disciple as unit.

Not necessarily I need to clarify more about what cannot be nullify therefore to disqualify we people as single nation yet and in-spite ; we still qualify to de-testify and crucify each other on the basis of ethnic, sectarian and racial ground as exemplify.

We are nation where corrupt and criminal try and prison other criminals in the name of crime as if they are the cream of time.

In my opinion we as nation have all origin of ethnic edition except Pakistani Version making all defined races as refined if son of the soil and undefined as swine who should get neither land nor Wine.

Today the federal Minister Khawaja asif gave a remarkable speech saying: If Bhutto and Nawaz can go jail why can’t Altaf’

I have word to say in this Regard and that is

Agreed!

“He must and should be trail, tracked and trial regardless”

But there’s a problem in it and that is we have racial treatment of punishment in law here;
“Bhutto would get a hangmen punishment as judicial crime obviously he was a Sindhi and Altaf would be treated with extrajudicial assault or whatever; Of course a Muhajir however; Mr. Nawaz would get relief to leave and spend days as debar and exile as if leave without pay hence spending days in delight and moon light may he be caught in caught in dramatizing the coup against the Military ………  do I have to explain his bearings

Regardless none can bear to put bar on EX-COAS and President of Pakistan in Pakistan; But and yes! Musharraf can be!

Remove the impression of possession as special race or community;

People will disbelief argument of racial notion or if you could not do the needful ‘what more one has to say other than accepting the charge’

“Start giving treatment equally and none has reason to deny and defy your opinion”. (Dr Raza)

Doosra Munkir , By Dr RazaHaider ” Payghumbero ki baat per shak kerna munkiri kay saath saath ghumrahee hua kerty hai…. aur yahee gumrahee hidayat ki dushman aur shaitan ki rawish hai.

 

جب یوسف نے اپنے والد سے کہا کہ ابا میں نے (خواب میں) گیارہ ستاروں اور سورج اور چاند کو دیکھا ہے۔ دیکھتا (کیا) ہوں کہ وہ مجھے سجدہ کر رہے ہیں (۴)

 

 انہوں نے کہا کہ بیٹا اپنے خواب کا ذکر اپنے بھائیوں سے نہ کرنا نہیں تو وہ تمہارے حق میں کوئی فریب کی چال چلیں گے۔ کچھ شک نہیں کہ شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے (۵)

 

 اور اسی طرح خدا تمہیں برگزیدہ (وممتاز) کرے گا اور (خواب کی) باتوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔ اور جس طرح اس نے اپنی نعمت پہلے تمہارے دادا، پردادا ابراہیم اور اسحاق پر پوری کی تھی اسی طرح تم پر اور اولاد یعقوب پر پوری کرے گا۔ بےشک تمہارا پروردگار (سب کچھ) جاننے والا (اور) حکمت والا ہے (۶)

 

 ہاں یوسف اور ان کے بھائیوں (کے قصے) میں پوچھنے والوں کے لیے (بہت سی) نشانیاں ہیں (۷)

 

 

غرض جب وہ اس کو لے گئے اور اس بات پر اتفاق کرلیا کہ اس کو گہرے کنویں میں ڈال دیں۔ تو ہم نے یوسف کی طرف وحی بھیجی کہ (ایک وقت ایسا آئے گا کہ) تم ان کے اس سلوک سے آگاہ کرو گے اور ان کو (اس وحی کی) کچھ خبر نہ ہوگی (۱۵)

 

 (یہ حرکت کرکے) وہ رات کے وقت باپ کے پاس روتے ہوئے آئے (۱۶)

 

 (اور) کہنے لگے کہ اباجان ہم تو دوڑنے اور ایک دوسرے سے آگے نکلنے میں مصروف ہوگئے اور یوسف کو اپنے اسباب کے پاس چھوڑ گئے تو اسے بھیڑیا کھا گیا۔ اور آپ ہماری بات کو گو ہم سچ ہی کہتے ہوں باور نہیں کریں گے (۱۷)

 

 اور ان کے کرتے پر جھوٹ موٹ کا لہو بھی لگا لائے۔ یعقوب نے کہا (کہ حقیقت حال یوں نہیں ہے) بلکہ تم اپنے دل سے (یہ) بات بنا لائے ہو۔ اچھا صبر (کہ وہی) خوب (ہے) اور جو تم بیان کرتے ہو اس کے بارے میں خدا ہی سے مدد مطلوب ہے (۱۸)

 

(Sureh Yousuf)

 

 

Payghumbero ka amal waheeaey ilahi kay  ain mutabiq hua kerta hai jo who kainaat k mailk ki raza kay  mutabiq… usshee ki khuwahisho ko mudday nazar rukh ker anjaam dea kertay hai

 

 

Yahee perwerdegar ki khuwahish khuaab ki soorat un ka ilhaam hua kerty hai ya phir….yahee  wahee ki soorat anay waala imtihaan aur azmaish hua kerty hai

 

 

Yahee wajah hai jo payghumber sirf hukm-e-illahi kay taabay hota hai ….. aur yahee hokum uss ki asal aur akhiree manzil hua kerty hai

 

Yahee hokum us ka sabr…. aur yahee sabr us hokum ka imtihaan aur azmaish.

 

Azmaish who amal hai jo payghumbero per ferz aur un ki aal per taqleed ki soorat shariat hai

 

 

Ajeeb falsafa hai iss Quran mein !

 

 Rusm- o- riwayat nishania leay huay hay aur nishania  naveed-e-saher.

 

 Hum nay dekha k payghumber aur rasool upnein naveed…….. in  nishnio kay sajdoe say munsalik hotay dekhtay hai

 

 

 

جب یوسف نے اپنے والد سے کہا کہ ابا میں نے (خواب میں) گیارہ ستاروں اور سورج اور چاند کو دیکھا ہے۔ دیکھتا (کیا) ہوں کہ وہ مجھے سجدہ کر رہے ہیں (۴)

 

 انہوں نے کہا کہ بیٹا اپنے خواب کا ذکر اپنے بھائیوں سے نہ کرنا نہیں تو وہ تمہارے حق میں کوئی فریب کی چال چلیں گے۔ کچھ شک نہیں کہ شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے (۵)

 

 اور اسی طرح خدا تمہیں برگزیدہ (وممتاز) کرے گا اور (خواب کی) باتوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔ اور جس طرح اس نے اپنی نعمت پہلے تمہارے دادا، پردادا ابراہیم اور اسحاق پر پوری کی تھی اسی طرح تم پر اور اولاد یعقوب پر پوری کرے گا۔ بےشک تمہارا پروردگار (سب کچھ) جاننے والا (اور) حکمت والا ہے (۶)

 

 ہاں یوسف اور ان کے بھائیوں (کے قصے) میں پوچھنے والوں کے لیے (بہت سی) نشانیاں ہیں (۷)

 

 

 Kia haqeeqat hai aur kia ufsana ;

 

 

 Quran haqeeqat k manind who afsana aashkaar kerta hai jo her anay waala din ko  wahee-e-elahi kay taabay aur uss din ko  hukum-e-khuda ka pabind kertay dikhta  hai .

 

 Insani soch mein wazanee aur mukaddas shey taqqat hey aur taqqutwer……….. taquto say bherpoor usshia ka ijtima

 

 Yeh kia taqqutain hain…….. jo jab kisey aanay waalay rasool ko sajda keray toe who Risalat k munsab per faiz hojata hai

 

Yanee ubb kainat ki Hershey usmuqadass zaat   kay tabbay hai jinhay yeh munsab ata hua

 

Chand suraj aur sitaray sajada keray to Nabowat aur jis nabi k ghar mein yahee chand suraj aur sitaray  jalwageer ho …..us ko kehtay hain Muhammed(SAWAW);

 

Yahee mohray Nabowat aur yahee khuda ka noor

 

 Yahee kubhee Hidayat aur yahee kubhee us paak Perwerdegaar ka soor

 

Tubhee toe yaqoob nay kaha kay

 

 

 انہوں نے کہا کہ بیٹا اپنے خواب کا ذکر اپنے بھائیوں سے نہ کرنا نہیں تو وہ تمہارے حق میں کوئی فریب کی چال چلیں گے۔ کچھ شک نہیں کہ شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے (۵)

 

 اور اسی طرح خدا تمہیں برگزیدہ (وممتاز) کرے گا اور (خواب کی) باتوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔ اور جس طرح اس نے اپنی نعمت پہلے تمہارے دادا، پردادا ابراہیم اور اسحاق پر پوری کی تھی اسی طرح تم پر اور اولاد یعقوب پر پوری کرے گا۔ بےشک تمہارا پروردگار (سب کچھ) جاننے والا (اور) حکمت والا ہے (۶)

 

 

 Yeh is leay kay perwerdegar ki maeeshut aur tareeqaey kaaar mein baat budla nahee kerty   aur her Risalat kay mansub per wohee taqatay…….. ijma ki soorat warid hoty hai aur jis per intaqquton ka nazool ho…. wohee munsab-e-elahi ka haqdaar.

 

 

 اور اسی طرح خدا تمہیں برگزیدہ (وممتاز) کرے گا اور (خواب کی) باتوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔ اور جس طرح اس نے اپنی نعمت پہلے تمہارے دادا، پردادا ابراہیم اور اسحاق پر پوری کی تھی اسی طرح تم پر اور اولاد یعقوب پر پوری کرے گا۔ بےشک تمہارا پروردگار (سب کچھ) جاننے والا (اور) حکمت والا ہے (۶)

 

 

 

 Baat yeh hai k khuda Upney naimat Upney naik bundoe per tamam kerta hai ;

 

yahee naimatain wirsa hoty hain……aur yahee wohee …..aur yahee un ki taqat kio kay …nishanio ka taalluq nishan say hai aur nishaan inhee kay perwerdegar tak phonchnay ka tarreqa-e-kaar

 

 Yahee nishan say bherpoor loag kubhi noor aur kubhee kisi per hidayat ka koh-e-toor 

 

Aur in hee ko hum nay aik baar phir sureh ale-imran mein kuch isterha dekha

 

 

پھر اگر یہ لوگ عیسیٰ کے بارے میں تم سے جھگڑا کریں اور تم کو حقیقت الحال تو معلوم ہو ہی چلی ہے تو ان سے کہنا کہ آؤ ہم اپنے بیٹوں اور عورتوں کو بلائیں تم اپنے بیٹوں اور عورتوں کو بلاؤ اور ہم خود بھی آئیں اور تم خود بھی آؤ پھر دونوں فریق (خدا سے) دعا والتجا کریں اور جھوٹوں پر خدا کی لعنت بھیجیں (۶۱) یہ تمام بیانات صحیح ہیں اور خدا کے سوا کوئی معبود نہیں اور بیشک خدا غالب اور صاحبِ حکمت ہے (۶۲)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

Naimato ka taaluq Rehmat say hai aur Rehmat rehmatullilalimeen kay asal falsafa…rehmant hi naimat ki soorat aur naimat in logo ki suoorat….yeh is leay kay aur jin ko who chun leta hai  un per hee yeh naimatay warid hoty hai

 

 

خدا نے آدم اور نوح اور خاندان ابراہیم اور خاندان عمران کو تمام جہان کے لوگوں میں منتخب فرمایا تھا (۳۳) ان میں سے بعض بعض کی اولاد تھے اور خدا سننے والا (اور) جاننے والا ہے (۳۴)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 

 Yahee nishania is ka raasta aur yahee who hisaar jis ki moujoodgi nijasat say door rukhtee hai

 

 

اور اس عورت نے ان کا قصد کیا اور انہوں نے اس کا قصد کیا۔ اگر وہ اپنے پروردگار کی نشانی نہ دیکھتے (تو جو ہوتا ہوتا) یوں اس لیے (کیا گیا) کہ ہم ان سے برائی اور بےحیائی کو روک دیں۔ بےشک وہ ہمارے خالص بندوں میں سے تھے (۲۴)

 

 

 Yeh is leay kay baap betay ki paki bayan keray aur beta baap ki pakeezhi say mushroot rahay

 

 

 

اے اہل بیت تم پر خدا کی رحمت اور اس کی برکتیں ہیں۔ وہ سزاوار تعریف اور بزرگوار ہے (۷۳)

 

سُوۡرَةُ هُود

 

 Yahee naimatoe ki taqmeelo ka merhala hai……… aur yahee azmiash payghumbero ko tamam khulqat say juda kerty hain

 

 

خدا نے آدم اور نوح اور خاندان ابراہیم اور خاندان عمران کو تمام جہان کے لوگوں میں منتخب فرمایا تھا (۳۳) ان میں سے بعض بعض کی اولاد تھے اور خدا سننے والا (اور) جاننے والا ہے (۳۴)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 

 

Yeh is leay kay  payghumber khuda ki zaban……. aur wohee uss ka kalam hua kerta hai

 

 

(اے پیغمبر لوگوں سے) کہہ دو کہ اگر تم خدا کو دوست رکھتے ہو تو میری پیروی کرو خدا بھی تمہیں دوست رکھے گا اور تمہارے گناہ معاف کر دے گا اور خدا بخشنے والا مہربان ہے (۳۱) کہہ دو کہ خدا اور اس کے رسول کا حکم مانو اگر نہ مانیں تو خدا بھی کافروں کو دوست نہیں رکھتا (۳۲)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 Yahee payghumber wohee –e-khuda ka muhafiz……… aur yahee uss kay aglay irado ka zamin

 

Yahee iraday  us ki azmaaish…… aur yahee azmaish uss ka amal.

 

 

Aisey hee azamaish say guzarnay say pehlay khuda yosuf ko Upney irado say kuch uoon waqif kerta hai kay

 

 

غرض جب وہ اس کو لے گئے اور اس بات پر اتفاق کرلیا کہ اس کو گہرے کنویں میں ڈال دیں۔ تو ہم نے یوسف کی طرف وحی بھیجی کہ (ایک وقت ایسا آئے گا کہ) تم ان کے اس سلوک سے آگاہ کرو گے اور ان کو (اس وحی کی) کچھ خبر نہ ہوگی (۱۵)

 

 

 

 Yahee who irada hai pak perwerdegar ka joe who basharat aur wohee ki soorat yousuf ko aagah kerraha hai…… kay ub aisa hoga aur tum zindan ki kafiat mein raho gay ….. aur aik din who hoga kay iss baat ko khud insay agah kero gay …

 

 

Toe khuwahisho ko poora kernay waalay mehboob bunday ka kamal yahee hai kay…… joe kaha… who suna aur ker kay… dikhadea.

 

 

Aur yahee perwerdegar ka irada ba zaban-e-yaqoob ;irado kay mehwer aur us ki khuwahish kernay waalay perwerdegaar ko…… kuch isterha bayan kerty hai kay

 

 

(یہ مشورہ کر کے وہ یعقوب سے) کہنے لگے کہ اباجان کیا سبب ہے کہ آپ یوسف کے بارے میں ہمارا اعتبار نہیں کرتے حالانکہ ہم اس کے خیرخواہ ہیں (۱۱)

 

 

انہوں نے کہا کہ یہ امر مجھے غمناک کئے دیتا ہے کہ تم اسے لے جاؤ (یعنی وہ مجھ سے جدا ہوجائے) اور مجھے یہ خوف بھی ہے کہ تم (کھیل میں) اس سے غافل ہوجاؤ اور اسے بھیڑیا کھا جائے (۱۳)

 

 

Hum nay dekha  kay yaqoob kay… Qazdun bolay alfaz….yani  who anay waala khof jis ki alamat yaqqob kay senay mein posheeda thee… khud is baat ki gawaheee thay… kay ubb aanay waala din is waqiaey ko  in hee alfaaz mein kuch isterha baayan keray ga

 

 

 

(اور) کہنے لگے کہ اباجان ہم تو دوڑنے اور ایک دوسرے سے آگے نکلنے میں مصروف ہوگئے اور یوسف کو اپنے اسباب کے پاس چھوڑ گئے تو اسے بھیڑیا کھا گیا۔ اور آپ ہماری بات کو گو ہم سچ ہی کہتے ہوں باور نہیں کریں گے (۱۷)

 

 

Aur inhee alfaaz ko maeeshat-e-Khuda aur azmaish maan ker yaqoob phir aik baar is baat ki gawahee detay hai kay ………….payghumber…… khuda ki khuwahish aur usski aglee chaht kay tabbay hua kertay hain……….. aur yeh kay….. perwerdegaar ki khwahishay un payghumbero kay kirdaar ka asal matun hoty hai

 

 

Jaisa is ayat mein yaqoob phir aik baar is waqiaey kay asal munzer ko kuch yoon bayan kerkay…  perwerdegaar ki uglee khuwahish ki taqmeel….. amal kerkay bayqan kertay hai

 

 

یعقوب نے کہا (کہ حقیقت حال یوں نہیں ہے) بلکہ تم اپنے دل سے (یہ) بات بنا لائے ہو۔ اچھا صبر (کہ وہی) خوب (ہے) اور جو تم بیان کرتے ہو اس کے بارے میں خدا ہی سے مدد مطلوب ہے (۱۸)

 

 

(یعقوب نے) کہا کہ میں اس کے بارے میں تمہارا اعتبار نہیں کرتا مگر ویسا ہی جیسا اس کے بھائی کے بارے میں کیا تھا۔ سو خدا ہی بہتر نگہبان ہے۔ اور وہ سب سے زیادہ رحم کرنے والا ہے (۶۴)

 

(جب انہوں نے یہ بات یعقوب سے آ کر کہی تو) انہوں نے کہا کہ (حقیقت یوں نہیں ہے) بلکہ یہ بات تم نے اپنے دل سے بنالی ہے تو صبر ہی بہتر ہے۔ عجب نہیں کہ خدا ان سب کو میرے پاس لے آئے۔ بےشک وہ دانا (اور) حکمت والا ہے (۸۳)

 

 

Aisa kia hai jo in payghumbero aur rasoolon ko uss pak perwerdegar ki khuwahisho kay aain mutabiq banadety hai

 

  

Kuch toe aisa hai jo kainaat kay is azeem munsabdaaro ko upney munsab say door nahee honay dety…. bulkay der hqeeqat un ko upney manzil kay kamil yaqeen ki kafiat per phoncha dety hai

 

اور زمین پر کوئی چلنے پھرنے والا نہیں مگر اس کا رزق خدا کے ذمے ہے وہ جہاں رہتا ہے، اسے بھی جانتا ہے اور جہاں سونپا جاتا ہے اسے بھی۔ یہ سب کچھ کتاب روشن میں (لکھا ہوا) ہے (۶)

 

سُوۡرَةُ هُود

 

 

Yahee qoowat-e-Ilahi  aur ishhe munsab ki zimadari ….aur uss kay tahafuz ki pabindy… aur paygumberay khuda ki emandari …………perwerdegar kuch is terha bayaan kerta hai kay

 

 

اور اس عورت نے ان کا قصد کیا اور انہوں نے اس کا قصد کیا۔ اگر وہ اپنے پروردگار کی نشانی نہ دیکھتے (تو جو ہوتا ہوتا) یوں اس لیے (کیا گیا) کہ ہم ان سے برائی اور بےحیائی کو روک دیں۔ بےشک وہ ہمارے خالص بندوں میں سے تھے (۲۴)

 

 

 To maloom yeh chula kay yeh nishania hai jo musalsal in payghumbero kay saath  moujood rehty hai ….jo bilakhofo khatar aur baher soorat in payghumbero ki hifazat….. aur un ka asal mehwer rehty hai

 

 

 ہاں یوسف اور ان کے بھائیوں (کے قصے) میں پوچھنے والوں کے لیے (بہت سی) نشانیاں ہیں (۷)

 

 

جب یوسف نے اپنے والد سے کہا کہ ابا میں نے (خواب میں) گیارہ ستاروں اور سورج اور چاند کو دیکھا ہے۔ دیکھتا (کیا) ہوں کہ وہ مجھے سجدہ کر رہے ہیں (۴)

 

 انہوں نے کہا کہ بیٹا اپنے خواب کا ذکر اپنے بھائیوں سے نہ کرنا نہیں تو وہ تمہارے حق میں کوئی فریب کی چال چلیں گے۔ کچھ شک نہیں کہ شیطان انسان کا کھلا دشمن ہے (۵)

 

 اور اسی طرح خدا تمہیں برگزیدہ (وممتاز) کرے گا اور (خواب کی) باتوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔ اور جس طرح اس نے اپنی نعمت پہلے تمہارے دادا، پردادا ابراہیم اور اسحاق پر پوری کی تھی اسی طرح تم پر اور اولاد یعقوب پر پوری کرے گا۔ بےشک تمہارا پروردگار (سب کچھ) جاننے والا (اور) حکمت والا ہے (۶)

 

 

Kainaat kay is ahm zimadari aur falsafey nabowat mein azmaish hi pehlee manzil hai .

 

In azmaisho mein raasaty kaee tareeq per mubnee hain laikin derasl in raasto per payghumber ki khuwahish ko hi muqadaam rukha jaata hai

 

Laikin is falsafaey hidayat ka barreq beeni say agar hum jaiza lay to hamay dikhta hai kay….. payghumber-e-y khuda sirf un raatso ko chuna kertay hain… jin per chulna dushwaar ……aur jin say guzarna bisaat say door amal ho

 

Yahee wajah hai k jo in azmaisho say hoker guzaerta hai who kamyaab aur kamran…. aur yahee nusratey khuda aur us k rasool ka asal matun…. jo kiainat kay iss azeem mertaby par faiz payghumber ko noor-e-y elahi mein pirodety hain

 

 

یوسف نے دعا کی کہ پروردگار جس کام کی طرف یہ مجھے بلاتی ہیں اس کی نسبت مجھے قید پسند ہے۔ اور اگر تو مجھ سے ان کے فریب کو نہ ہٹائے گا تو میں ان کی طرف مائل ہوجاؤں گا اور نادانوں میں داخل ہوجاؤں گا (۳۳)

 

 تو خدا نے ان کی دعا قبول کرلی اور ان سے عورتوں کا مکر دفع کر دیا۔ بےشک وہ سننے (اور) جاننے والا ہے (۳۴)

 

 

Payghumber aik doosray per azmiash hai aur yahee azmaish unhay aik doosray per kuch isterha fazilat bukhhtee hai……… jo beta phir baap say berter dikhta hai ……….aur yahee baap baitay kay amal ka mutalashee

 

yeh is leay kay wirasat us ka haq aur wildat us ka naya munsab

 

 

ہم جس کے لیے چاہتے ہیں درجے بلند کرتے ہیں۔ اور ہر علم والے سے دوسرا علم والا بڑھ کر ہے (۷۶)

 

 

fulsafey hidayat mein berteri munsab ko nahee…. bulkay aanay walay amal ki nisbat hai

 

Yahee amal anay waalay naey dorr mein nayey falsafey qurbani ka naam ……….aur yahee phichlo ki riwayat ….aur yahee agloe ka uss say bherr ker amal

 

 

یہ میرا کرتہ لے جاؤ اور اسے والد صاحب کے منہ پر ڈال دو۔ وہ بینا ہو جائیں گے۔ اور اپنے تمام اہل وعیال کو میرے پاس لے آؤ (۹۳)

 

 

Perwerdegar kay haan  payghumber ki soch aur un ki samjh gherz her shey………. aik ilm ki sorat hai jo ilhaam aur wohee ka hee amal hai ;

 

yahee ilm un ki kafiat aur yahee un kafiato ka haal aur anjaam

 

 

پھر ان کے پاس سے چلے گئے اور کہنے لگے ہائے افسوس یوسف (ہائے افسوس) اور رنج والم میں (اس قدر روئے کہ) ان کی آنکھیں سفید ہوگئیں اور ان کا دل غم سے بھر رہا تھا (۸۴) بیٹے کہنے لگے کہ والله اگر آپ یوسف کو اسی طرح یاد ہی کرتے رہیں گے تو یا تو بیمار ہوجائیں گے یا جان ہی دے دیں گے (۸۵) انہوں نے کہا کہ میں اپنے غم واندوہ کا اظہار خدا سے کرتا ہوں۔ اور خدا کی طرف سے وہ باتیں جانتا ہوں جو تم نہیں جانتے (۸۶)

 

 

 Ajeeb baat hai jis ka ilm waheeey illahai per muheet ho….. who  runjo alam mein….. kayfiato say guzar ker  ronay aur yaad kernay ko ibadat banadeta hai .

 

Yahee qanoon payghumbero ki wasiyat ……aur yahee qanoon khuda ki naseehat hai

 

Rona Upney dukho ka izhaar hai aur izhaar agar dil ki kafiat leay annkho say jari aansoon ki soorat ho toe  iss amal ka asal mamba khaliq-ey haqeeqi bun jaata hai…. aur ronay waala us khaliq kay ilm ka hamil.

 

 

بیٹے کہنے لگے کہ والله اگر آپ یوسف کو اسی طرح یاد ہی کرتے رہیں گے تو یا تو بیمار ہوجائیں گے یا جان ہی دے دیں گے (۸۵) انہوں نے کہا کہ میں اپنے غم واندوہ کا اظہار خدا سے کرتا ہوں۔ اور خدا کی طرف سے وہ باتیں جانتا ہوں جو تم نہیں جانتے (۸۶)

 

 

 

 

 Yahee rona payghumbero ki adat aur yahee un ka falsafey Hidayat

 

 

اور بےشک وہ صاحبِ علم تھے کیونکہ ہم نے ان کو علم سکھایا تھا لیکن اکثر لوگ نہیں جانتے (۶۸)

 

 

ہم جس کے لیے چاہتے ہیں درجے بلند کرتے ہیں۔ اور ہر علم والے سے دوسرا علم والا بڑھ کر ہے (۷۶)

 

 

Payghumbero ka ilm…. ilm-e wahdaniyat  ka asal khulaasa hai……… aur yahee ilm khuda ka un per ahsaan

 

 

پھر یوسف نے اپنے بھائی کے شلیتے سے پہلے ان کے شلیتوں کو دیکھنا شروع کیا پھر اپنے بھائی کے شلیتے میں سے اس کو نکال لیا۔ اس طرح ہم نے یوسف کے لیے تدبیر کی (ورنہ) بادشاہ کے قانون کے مطابق وہ مشیتِ خدا کے سوا اپنے بھائی کو لے نہیں سکتے تھے۔ ہم جس کے لیے چاہتے ہیں درجے بلند کرتے ہیں۔ اور ہر علم والے سے دوسرا علم والا بڑھ کر ہے (۷۶)

 

 

اور ہدایت کی کہ بیٹا ایک ہی دروازے سے داخل نہ ہونا بلکہ جدا جدا دروازوں سے داخل ہونا۔ اور میں خدا کی تقدیر کو تم سے نہیں روک سکتا۔ بےشک حکم اسی کا ہے میں اسی پر بھروسہ رکھتا ہوں۔ اور اہلِ توکل کو اسی پر بھروسہ رکھنا چاہیئے (۶۷) اور جب وہ ان ان مقامات سے داخل ہوئے جہاں جہاں سے (داخل ہونے کے لیے) باپ نے ان سے کہا تھا تو وہ تدبیر خدا کے حکم کو ذرا بھی نہیں ٹال سکتی تھی ہاں وہ یعقوب کے دل کی خواہش تھی جو انہوں نے پوری کی تھی۔ اور بےشک وہ صاحبِ علم تھے کیونکہ ہم نے ان کو علم سکھایا تھا لیکن اکثر لوگ نہیں جانتے (۶۸)

 

 

 

Payghumber-e- khuda her haal mein wahee elahi per munjamid aur munhasir hua kertay hai …….aur yeh wahee hee hai joe  un kay her ahsasaat ko such ki terha dunya mein………… haq aur batil say juda rukhty hai

 

 

اور جب قافلہ (مصر سے) روانہ ہوا تو ان کے والد کہنے لگے کہ اگر مجھ کو یہ نہ کہو کہ (بوڑھا) بہک گیا ہے تو مجھے تو یوسف کی بو آ رہی ہے (۹۴) وہ بولے کہ والله آپ اسی قدیم غلطی میں (مبتلا) ہیں (۹۵)

 

 

  yahee kayfiat un kay munsab ka nivchoor …..aur ishee kafiat per un kay munsab ka inhisaar

 

 

جب خوشخبری دینے والا آ پہنچا تو کرتہ یعقوب کے منہ پر ڈال دیا اور وہ بینا ہو گئے (اور بیٹوں سے) کہنے لگے کیا میں نے تم سے نہیں کہا تھا کہ میں خدا کی طرف سے وہ باتیں جانتا ہوں جو تم نہیں جانتے (۹۶)

 

 

 Payghumbero ki baat per shak kerna munkiri kay saath saath ghumrahee hua kerty hai…. aur yahee gumrahee hidayat ki dushman aur shaitan ki rawish hai.

 

Jis nay kainaat kay mubarak ahdedaar say munkiri  ki….. us nay goya wahdanyat kay munsaab ko shak ki nigah say dekha ….. aur yahee shuk shaitan ko shaitan banay k leay shaitan ka shaitani amal.

 

 

جب خوشخبری دینے والا آ پہنچا تو کرتہ یعقوب کے منہ پر ڈال دیا اور وہ بینا ہو گئے (اور بیٹوں سے) کہنے لگے کیا میں نے تم سے نہیں کہا تھا کہ میں خدا کی طرف سے وہ باتیں جانتا ہوں جو تم نہیں جانتے (۹۶) بیٹوں نے کہا کہ ابا ہمارے لیے ہمارے گناہ کی مغفرت مانگیئے۔ بےشک ہم خطاکار تھے (۹۷)

 

 Ajeeb baat hai Paygyghumbero ko jhutlana aik rawaish chulee aarahee hai…. aur koi dorr aisa nahee dikhta jis mein payghumbero aur un say munsalik wahee aur ilhaam say…. batil munharif aur munkir nahee hua

 

Asiahee humnay aik baar phir….. Un hee tareeqay qar ko qaim rukhtay huay…. ushee shaitani fitrat aur munkiri say rungee hue shaitani terbiat ko…..  dobara tareekh –e-islam aur waheee ilahee ki aakhree wahee…. aur un akhree chund ayyam mein phir dekhy….. jis mein Jhutlaanay waalay nay aik baar phir….. usshee shaitani  riwayat ko qaim rukhtay huay ….Upney amal say phir aik baar shaitani terbiat  ka moon bolta sabot kuch isterha dea kay…. tareekh khud munkir ki Gawah aur Quran us gawahee per such bana

 

 

خدا ایسے لوگوں کو کیونکر ہدایت دے جو ایمان لانے کے بعد کافر ہوگئے اور (پہلے) اس بات کی گواہی دے چکے کہ یہ پیغمبر برحق ہے اور ان کے پاس دلائل بھی آگئے اور خدا بے انصافوں کو ہدایت نہیں دیتا (۸۶) ان لوگوں کی سزا یہ ہے کہ ان پر خدا کی اور فرشتوں کی اور انسانوں کی سب کی لعنت ہو (۸۷) ہمیشہ اس لعنت میں (گرفتار) رہیں گے ان سے نہ تو عذاب ہلکا کیا جائے گا اور نہ انہیں مہلت دے جائے گی (۸۸)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 Yahee who aakhree din aur akree kalaam-e-y perwerdegar tha… jo bazaban-e-Mustafa(SAWAW)  Quran aur risalaat ka …..takmeeli  kulasa bana

 

Aur who yeh kay….. “mujhay Kaghus kalam doe takaay mein who likh doe jis k baad tum bhatak na sako”

 

Laikin tareekh Gawah hai kay jhutlaanay waalay nay…….Upney aabao ajdaad ki riwayut ko upnatay huay …..wohee kaam kia jo us ssay pehlay us kay mehboob shaitan nay kea tha …. aur yuk dum bol uttha kay ‘ “hamaray leay Quran hi kafee hai”

 

 

اور جب ان سے کہا جاتا ہے کہ جو خدا نے (اب) نازل فرمائی ہے، اس کو مانو۔ تو کہتے ہیں کہ جو کتاب ہم پر (پہلے) نازل ہو چکی ہے، ہم تو اسی کو مانتے ہیں۔ (یعنی) یہ اس کے سوا کسی اور (کتاب) کو نہیں مانتے، حالانکہ وہ (سراسر) سچی ہے اور جو ان کی (آسمانی) کتاب ہے، اس کی بھی تصدیق کرتی ہے۔ (ان سے) کہہ دو کہ اگر تم صاحبِ ایمان ہوتے تو الله کے پیغمبروں کو پہلے ہی کیوں قتل کیا کرتے (۹۱)

 

 

 سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

 

Bus iss hee ko munafiq bay emaan kehtay hai…. jo keh dey kay hum ko kitaab hee kafee hai …yahee Un kafiron ki aulad hain aur thay … jin kay baap dada pehlay pyghumbero ko qatal kia kertay thay…. Quran kitnee piyaree kitaab hai ……..sub kuch kehdea bus… samjh unhee ko dee jin ko Kitaab dee

 

 

جس چیز کے بدلے انہوں نے اپنے تئیں بیچ ڈالا، وہ بہت بری ہے، یعنی اس جلن سے کہ خدا اپنے بندوں میں جس پر چاہتا ہے، اپنی مہربانی سے نازل فرماتا ہے۔ خدا کی نازل کی ہوئی کتاب سے کفر کرنے لگے تو وہ (اس کے) غضب بالائے غضب میں مبتلا ہو گئے۔ اور کافروں کے لیے ذلیل کرنے والا عذاب ہے (۹۰)

 

سُوۡرَةُ البَقَرَة

پس کافروں پر الله کی لعنت (۸۹)

 

 

سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

 Yeh mein nahee kehraha tareekh khud Upney zaban leay us amal ko bayan kerrahee hai……. joe zalim kay zulm ka moon bolta saboot bunee.

 

 Khuda ki phitkaar jhutlaanay waalao per… jinn kay amal ayato ki succhaee bunaey

 

 

اور اگر ہم تم پر کاغذوں پر لکھی ہوئی کتاب نازل کرتے اور یہ اسے اپنے ہاتھوں سے بھی ٹٹول لیتے تو جو کافر ہیں وہ یہی کہہ دیتے کہ یہ تو (صاف اور) صریح جادو ہے (۷)

 

سُوۡرَةُ الاٴنعَام

 

 

 

 

 

Yahee who such tha…. ayaton mein moujood jis ki suchaee dunya nay dekhy kay… kisterha munkareen-e-risalat  nay  upney herbo aur ausaaf say deen-e-kamil ko para para kia

 

 

کہو کہ (اے منکرین رسالت) ملک میں چلو پھرو پھر دیکھو کہ جھٹلانے والوں کا کیا انجام ہوا (۱۱)

 

سُوۡرَةُ الاٴنعَام

 

 

Yeh mein nahee kehta  bulkay yeh khud tumharee haqeeqat hai jot um khud bayan kertay ho

 

 

اور لوگوں میں کوئی ایسا بھی ہے جو خدا (کی شان) میں بغیر علم (ودانش) کے اور بغیر ہدایت کے اور بغیر کتاب روشن کے جھگڑتا ہے (۸) (اور تکبر سے) گردن موڑ لیتا (ہے) تاکہ (لوگوں کو) خدا کے رستے سے گمراہ کردے۔ اس کے لئے دنیا میں ذلت ہے۔ اور قیامت کے دن ہم اسے عذاب (آتش) سوزاں کا مزہ چکھائیں گے (۹) (اے سرکش) یہ اس (کفر) کی سزا ہے جو تیرے ہاتھوں نے آگے بھیجا ہے اور خدا اپنے بندوں پر ظلم کرنے والا نہیں (۱۰)

 

سُوۡرَةُ الحَجّ

 

 

 

 

 Such ki iss kahani jo khud perhloe aur faysla kero kay mujrim kon…. jis nay kainaat ka sheeraza bhikair ker…. uss ko ghafil kerdea..aur her uss nufs ko jis nay us ski payrvi ki ko wasil-e-Jahanum kea.

 

 

 Here are quotation and abstracts from the books of authentic sources as per Fiqah.

 

 

“The book of Allah is sufficient for us.” (Umer khattab)

(Sahih Bukhari, Sahih Muslim, Fat-hul Bari, Tabrani, Tarikh Ahmadi)

 

This declaration by one of the companions, who also observed that “the old man was in a delirium” was a willful contravention of this and many such verses of the Quran, because we cannot say that he was an ignorant fool who was not aware of the book of Allah.

The above-noted tradition is known as hadith al-qartas.

 

 

Narrated Ibn ‘Abbas:

 

When Allah’s Apostle was on his death-bed and in the house there were some people among whom was ‘Umar bin Al-Khattab, the Prophet said, “Come, let me write for you a statement after which you will not go astray.” ‘Umar said, “The Prophet is seriously ill and you have the Quraan; so the Book of Allah is enough for us.” Sahih Bukhari Volume 7, Book 70, Number 573

 

 

Narrated Ibn ‘Abbas:

When the time of the death of the Prophet approached while there were some men in the house, and among them was ‘Umar bin Al-Khatttab, the Prophet said, “Come near let me write for you a writing after which you will never go astray.” ‘Umar said, “The Prophet is seriously ill, and you have the Quraan, so Allah’s Book is sufficient for us.” Sahih Bukhari Volume 9, Book 92, Number 468

 

Ibn Abbas reported: When Allah’s Messenger (may peace be upon him) was about to leave this world, there were persons (around him) in his house, ‘Umar b. al-Kbattab being one of them. Allah’s Apostle (may peace be upon him) said: Come, I may write for you a document; you would not go astray after that. Thereupon Umar said: Verily Allah’s Messenger (may peace be upon him) is deeply afflicted with pain. You have the Quraan with you. The Book of Allah is sufficient for us. Sahih Muslim Book 013, Number 4016

 

 

 

Then just a few days before his death, the Prophet (peace be upon him & his progeny) said:”…Come on, I will write for you a writing (because of which) you shall not go astray after me.” But ‘Umar said: ‘Surely, the Messenger of Allah is overcome by pain, and you have got the Qur’an; the Book of Allah is sufficient for us…” [5] 

[5] Sahih Muslim, vol. 3 (Beirut. 1st edition. 19O5/1375)p.1295. Bukhari has given this tradition in four places Vide ,Sahih Bukhari (Cairo: 1958)vol. 1 (“Kitabu ‘l-ilm: bab kitabatu ‘l- ilm ) p. 39: vol. 6 (“Bab kitabu ‘n-Nabi ila Kasra wa Qaysar) pp 11-12: vol.7 ( Kitabu ‘t-tibb: bab qawli ‘l-marid Qumu ‘anni’) pp. 155-156: vol. 9 (“Kitabu l-itisam bi l-kitab wa s-sunnah: bab karahiyyati ‘l-khilaf’) p. 137. 

 

 

Sahih Muslim Book 13. Bequests

 

Chapter : He who has not anything with him to will away should not do it.

Ibn Abbas reported: When Allah’s Messenger (May peace be upon him) was about to leave this world, there were persons (around him) in his house, ‘Umar b. al-Kbattab being one of them. Allah’s Apostle (may peace be upon him) said: Come, I may write for you a document; you would not go astray after that. Thereupon Umar said: Verily Allah’s Messenger (may peace be upon him) is deeply afflicted with pain. You have the Qur’an with you. The Book of Allah is sufficient for us. Those who were present in the house differed. Some of them said: Bring him (the writing material) so that Allah’s Messenger (may peace be upon him) may write a document for you and you would never go astray after him And some among them said what ‘Umar had (already) said. When they indulged in nonsense and began to dispute in the presence of Allah’s Messenger (may peace be upon him), he said: Get up (and go away) ‘Ubaidullah said: Ibn Abbas used to say: There was a heavy loss, indeed a heavy loss, that, due to their dispute and noise. Allah’s Messenger (may peace be upon him) could not write (or dictate) the document for them.

 

 

Sahih Bukhari Volume 007, Book 070, Hadith Number 573.

Sahih Bukhari Book 70. Patients

 

Narrated By Ibn ‘Abbas : When Allah’s Apostle was on his death-bed and in the house there were some people among whom was ‘Umar bin Al-Khattab, the Prophet said, “Come, let me write for you a statement after which you will not go astray.” ‘Umar said, “The Prophet is seriously ill and you have the Qur’an; so the Book of Allah is enough for us.” The people present in the house differed and quarreled. Some said “Go near so that the Prophet may write for you a statement after which you will not go astray,” while the others said as Umar said. When they caused a hue and cry before the Prophet, Allah’s Apostle said, “Go away!” Narrated ‘Ubaidullah: Ibn ‘Abbas used to say, “It was very unfortunate that Allah’s Apostle was prevented from writing that statement for them because of their disagreement and noise.”

 

Tarrekh ka yeh seeah aeena..islam ki tareekh ka budnuma tareen hissa hai ….jis mein musalmano nay Upney deen aur Upney hee payghumber (SAWAW) say inkaar ker kay…. wahe-e-Elahi ko thukraya

 

 Is k baad ubb her qoum ,her mazhab chahey who koi ho aur kahee ho…… baraber hogaye

 

Yeh is leay k jiss jiss nay payghumber-e- khuda ko jhutlaya …. who bilshuba kufr mein dooba hua nikla…..

 

 Shayed jab hee yeh ayat  her qoum aur her  mazhab ko baraber kerkay…. sirf is baat per naimat ko mushroot kerty hai…… kay joe koi Khuda aur roz-e-akir per emaan laye ga wohee jannat ka haqdaar hoga

 

 

جو لوگ مومن (یعنی مسلمان) ہیں اور جو یہودی ہیں اور ستارہ پرست اور عیسائی اور مجوسی اور مشرک۔ خدا ان (سب) میں قیامت کے دن فیصلہ کردے گا۔ بےشک خدا ہر چیز سے باخبر ہے (۱۷)

 

سُوۡرَةُ الحَجّ

 

 

إِنَّ ٱلَّذِينَ ءَامَنُواْ وَٱلَّذِينَ هَادُواْ وَٱلنَّصَـٰرَىٰ وَٱلصَّـٰبِـِٔينَ مَنۡ ءَامَنَ بِٱللَّهِ وَٱلۡيَوۡمِ ٱلۡأَخِرِ وَعَمِلَ صَـٰلِحً۬ا فَلَهُمۡ أَجۡرُهُمۡ عِندَ رَبِّهِمۡ وَلَا خَوۡفٌ عَلَيۡہِمۡ وَلَا هُمۡ يَحۡزَنُونَ (٦٢)
سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

جو لوگ مسلمان ہیں یا یہودی یا عیسائی یا ستارہ پرست، (یعنی کوئی شخص کسی قوم و مذہب کا ہو) جو خدا اور روز قیامت پر ایمان لائے گا، اور نیک عمل کرے گا، تو ایسے لوگوں کو ان (کے اعمال) کا صلہ خدا کے ہاں ملے گا اور (قیامت کے دن) ان کو نہ کسی طرح کا خوف ہوگا اور نہ وہ غم ناک ہوں گے (۶۲)

 

سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

 

 Yahee is ayat mein akhree din say mazkoor ziker …..jotum nay terjumay ki bheet cherha ker us kay maeeno ko badal daala …. werna ayat  bilkul wazih alfaaz leay…. Upney perhnay waalay ko  is baat ka undea dey rahee hai kay……

 

Joe koi khuda aur roz-e-akir per emaaan laaye ga….. wohee qayamat  mein baykhof hoga….. chahey who majoosay ho… ya sitaraparast… ya koi aur kisi mazhab say

 

 Jhootay per khuda ki laaanat

 

کہہ دو کہ خدا اور اس کے رسول کا حکم مانو اگر نہ مانیں تو خدا بھی کافروں کو دوست نہیں رکھتا (۳۲)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

خدا ایسے لوگوں کو کیونکر ہدایت دے جو ایمان لانے کے بعد کافر ہوگئے اور (پہلے) اس بات کی گواہی دے چکے کہ یہ پیغمبر برحق ہے اور ان کے پاس دلائل بھی آگئے اور خدا بے انصافوں کو ہدایت نہیں دیتا (۸۶)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 

Yaad rukho!

 

خدا نے آدم اور نوح اور خاندان ابراہیم اور خاندان عمران کو تمام جہان کے لوگوں میں منتخب فرمایا تھا (۳۳) ان میں سے بعض بعض کی اولاد تھے اور خدا سننے والا (اور) جاننے والا ہے (۳۴)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 

کہو کہ (اے منکرین رسالت) ملک میں چلو پھرو پھر دیکھو کہ جھٹلانے والوں کا کیا انجام ہوا (۱۱)

 

سُوۡرَةُ آل عِمرَان

 

 

پس جو حکم تم کو (خدا کی طرف سے) ملا ہے وہ (لوگوں کو) سنا دو اور مشرکوں کا (ذرا) خیال نہ کرو (۹۴) ہم تمہیں ان لوگوں (کے شر) سے بچانے کے لیے جو تم سے استہزاء کرتے ہیں کافی ہیں (۹۵) جو خدا کے ساتھ معبود قرار دیتے ہیں۔ سو عنقریب ان کو (ان باتوں کا انجام) معلوم ہوجائے گا (۹۶) اور ہم جانتے ہیں کہ ان باتوں سے تمہارا دل تنگ ہوتا ہے (۹۷) تو تم اپنے پروردگار کی تسبیح کہتے اور (اس کی) خوبیاں بیان کرتے رہو اور سجدہ کرنے والوں میں داخل رہو (۹۸) اور اپنے پروردگار کی عبادت کئے جاؤ یہاں تک کہ تمہاری موت (کا وقت) آجائے (۹۹)

 

سُوۡرَةُ الحِجر

 

 

(Dr Raza)

piyaar ki Bay lagaam Aandhee,By DrRazaHaider

Piyar ki khusosiat; us k chhney mein hai;

 iqrar aur aur ikaar to dil behlaanay k tareeqay hai .

Tumhara maana ya na maana meray piyar  ko kum nahee kerta

 bulkay tumhain majborr kerta hai k tum haan ya na say uss ka istaqbal kero;

Kia yeh kafee nahee kay ub tumhain meray sawal ka intizaar rehta hai

bilkul ishee terha jis terha mein tumhaaray aanay ka intizaar kerta hoon..

Yeh zaroori toe nahee k mein tumhain jeet hee loo

 laikin dilo say haar nahee maanee jaatee kio k!

 jaahan muqabla sirf nufrat ya muhabbat kay dermian ho

wahan jeet aasaan hojayakerty hai !yeh is leay k

muhabbat aur nufrat  k dermian sirf nufrat ki lakeerr hoty hai

aur lakeeray succhay piyar ki bay lagaam aandhee mein mit jaya kerty hai (Dr Raza)

Ishq aur Muhabbat,By Dr RazaHaider

 

Asal mein Baat yeh hai k!

 

 Merd muhabat kahee aur kerta hai aur isq kahee aur

 

Muhabbat zaban say niklay woh alfaaz hain jo dil ki kafiat bayan kertay hai ;

 

 jab k ishq  alfaaz mein proya nahee ja sukta

 

Shayed yahee wajah hai jo meri  chahat tumharay saamnay meri hi baybasi ka bais hai

 

Werna such toe yeh hai k ishq muhabbat ki manzil say agay ka falsafa hai

 

Jubhee toe mein kehta hoon ;

 

Tum mera ishq hoe per muhabbat koi aur

 

 (Dr Raza)

Aurat Maiary MutABIq, By Dr RazaHaider

zarroree  toe nahee k zulm kernay wala hee zalim ho …

 

who mazloom bhee zalim say kum nahee jo zulm ko sehtay sehaty zalim ko phir zulm kernay per mujboor aur uss kay zulm ko  nasoor ki hayseat deyday

 

mera jeena mera zulm sehna hai aur

 

 mera sehna hee tumhaary musalsal  zulm ki wajah

 

 aur yehee wajah hai…. jo zarroorat banakerti hai

 

jis zulm ki wajah  mazloom ki chahat aur shok per mubnee ho

 

  uss zulm mein zalim zulm kernay waala nahee bulkay zulm sehnay waala hai

 

yeh mera shok hai jo tumharay haatho ki nermi say  Upney wajood ki germi  ko  thunda kerta hai

 

(Dr Raza)

 

*******************

 

 

 Meri kia majaal k jisay mera dil chahey….. ussey mein zaban kay  bay lagaam  lafzo k saanchon say daaghdaar kero

 

 Baat yeh hai k !

 

dunya ajaib ghar ki manind hai …..jahan wajood her shey ko uss k naey aur nit naye rung mein dekh ker shushder rehjaata hai

 

kainat ki khoobsoorat tareen khalqat mein aurat he who dil ki taskeen hai …. jo dil ko uss kay asal mushroob yanee muhabbat say aashnaee deti hai ;

 

muhabbat dil ka miljaana nahee bulkay dil ka …..khoobsoorty ki dahleez per fida hojaana hai

 

 mein kio na fida hoon uss khaalqat per jo khaliq ki behtareen takhleeq ki tasweer pesh keray

 

aurat hee khoobsoorty ki intiha aur who hee dil kee chuppey kafiat ka naam hai

 

wohee kainaat ka rung aur wohee hum jaisay mawalio ka bhung hai !

 

shayed yahe wajah hai k Paida kernay waalay nay issay jannat mein bhee hooron say tashbeeh dee

 

meri nazar mein mairay sakoon k peechay aurat hai …..aur  mairay wajood k peechay …..usshe aurat ka aser…… jisay tum zehr kehtay ho aur mein  ussay  saher.

 

(Dr Raza)

 

********************

 

 

jee haan yeh aulaad ka khoobsoorat tohfa hai

 

joe yeh zalim(Aurat ) kay jabr ka tareeqaey kaar  aur uss ki  khhobsoorat  zulfon ka tez dhaar  hatyar hai……  aur yahee uss k hum per istimaal ka shaksaana;

 

 jis k baad aap…… zulm ki her rewayat ko upna  ferz aur  zindagi ko iss ka kerz samjhtay hai ;

 

khoobsoorat hai woh jo Upney  zulm mein piyaar ka woh russ ghoal dey;

 

jiss ka peenay waala her shaam usss zehr aalood khunjer ka intizaar keray;

 

(Dr Raza)

***********************

Such poochoe toe aurat who hassen shahkaar hai jo saath ho to smaaa hai aur sath na ho the aho faghan

 Kia kehna kainat ki uss hassen wadi ka jis mein khilnay waala her phool  us ka aser aur us kay husn ki aqasee keray

Yeh who shahkaar hai jo jaan bhee daidaita  hai aur jub zaroorat perhay toe jaan bhee laylayta hai

Such pooch toe! Aurat  hee mairay dil ki who kayfiat hai jo dil ko dherakney per mujboor kerty hai (Dr Raza)  

 

Shiat Ki ibtida aur irtaqa, Ale –Muhammad (SAWAW), Shian-e-Payghumber –o- Rasool, By Dr RazaHaider

 

ہم کو سیدھے رستے چلا (۶) ان لوگوں کے رستے جن پر تو اپنا فضل وکرم کرتا رہا نہ ان کے جن پر غصے ہوتا رہا اور نہ گمراہوں کے (۷)

سُوۡرَةُ الفَاتِحَة

 

Yeh kon hai jin k raastay ko quran Hidayat kehraha

 

hai

 

جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں (۳) اور جو کتاب (اے محمدﷺ) تم پر نازل ہوئی اور جو کتابیں تم سے پہلے (پیغمبروں پر) نازل ہوئیں سب پر ایمان لاتے اور آخرت کا یقین رکھتے ہیں (۴) یہی لوگ اپنے پروردگار (کی طرف) سے ہدایت پر ہیں اور یہی نجات پانے والے ہیں (۵)

سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

Hidayat hee who munzil hai jo her payghumber ka moajza bunee

 

Yahee hidayat adm ki takhleeeq aur dunya mein amad k baad intizaar.

 

ہم نے فرمایا کہ تم سب یہاں سے اتر جاؤ جب تمہارے پاس میری طرف سے ہدایت پہنچے تو (اس کی پیروی کرنا کہ) جنہوں نے میری ہدایت کی پیروی کی ان کو نہ کچھ خوف ہوگا اور نہ وہ غمناک ہوں گے (۳۸) اور جنہوں نے (اس کو) قبول نہ کیا اور ہماری آیتوں کو جھٹلایا، وہ دوزخ میں جانے والے ہیں (اور) وہ ہمیشہ اس میں رہیں گے (۳۹)

 

سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

 

Yahee hidayat moosa k leay Khizer aur essa k leay essa k hawaree

 

 

اور اس نے آدم کو سب (چیزوں کے) نام سکھائے پھر ان کو فرشتوں کے سامنے کیا اور فرمایا کہ اگر تم سچے ہو تو مجھے ان کے نام بتاؤ (۳۱) انہوں نے کہا، تو پاک ہے۔ جتنا علم تو نے ہمیں بخشا ہے، اس کے سوا ہمیں کچھ معلوم نہیں۔ بے شک تو دانا (اور) حکمت والا ہے (۳۲) (تب) خدا نے (آدم کو) حکم دیا کہ آدم! تم ان کو ان (چیزوں) کے نام بتاؤ۔ جب انہوں نے ان کو ان کے نام بتائے تو (فرشتوں سے) فرمایا کیوں میں نے تم سے نہیں کہا تھا کہ میں آسمانوں اور زمین کی (سب) پوشیدہ باتیں جاتنا ہوں اور جو تم ظاہر کرتے ہو اور جو پوشیدہ کرتے ہو (سب) مجھ کو معلوم ہے (۳۳)

سُوۡرَةُ البَقَرَة

اور جب ہم نے موسیٰ کو کتاب اور معجزے عنایت کئے، تاکہ تم ہدایت حاصل کرو (۵۳)

سُوۡرَةُ البَقَرَة

اور جب موسیٰ نے اپنی قوم کے لیے (خدا سے) پانی مانگا تو ہم نے کہا کہ اپنی لاٹھی پتھر پر مارو۔ (انہوں نے لاٹھی ماری) تو پھر اس میں سے بارہ چشمے پھوٹ نکلے، اور تمام لوگوں نے اپنا اپنا گھاٹ معلوم کر (کے پانی پی) لیا۔ (ہم نے حکم دیا کہ) خدا کی (عطا فرمائی ہوئی) روزی کھاؤ اور پیو، مگر زمین میں فساد نہ کرتے پھرنا (۶۰)

سُوۡرَةُ البَقَرَة

 

 Shiat koi tasawerrati deen nahee bulkay hidayat ka tasalsul hai  jo adam say lay ker hidayat(Muhammed SAWAW) kay upnay anay tuk musalsal payghumbero k munsab k saath sath chulty rahee

 

Hidayat shian-e-Ali nahee bulkay Ale- Muhammed shian-e-Payghuber aur rasool rahay hain

 

Yahee loag upnay nazool-e-dunya k waqt kainaat ki taqmeel aur deen ko kamil kernay ki asal wajah.

 

Ali hee her payghumber ka wasi aur ali hi heraik ka wali raha

 

Yahee wajah hai k loag hidayat k dushman rahay aur hidayat k hee munkir.

 

Muhammed(SAWAW) ka ana aur Ali ka Wahdaniyat ka iqrar aur risalt ka tahaffuz hee who Hadi ki hidayat hai jo Ali ko hidayat k munsab per faiz kerta hai (Dr raza)

Philosophy behind Ya Allah (SWT) Madad, By Dr RazaHaider, “Ya Allah madad tumhara falsafa nahee bulkay Mola-e-kainaat ki asal taqat hai aur Ali hee ki zaban ki Pehlee shahadat”

Falsafey wahdaniyat mein madad  dushwaar guzaar raasto mein rehmat kay hasool ka naam hai.

 

Rehmat woh naimat hai jo na ahel ko ahel banatee hai  takay insaan Upney kamzorio ko door ker k anay waalay lamhaat mein ahsan tareeq say amal paira ho.

 

Manzil raasta nahee bataya kerty aur  naa hee raasto k tabaay hoty hai

 

Haan! Magar  her anay waala aur woh jo manzil ka mutalashee hai  ;seedhay raastay ki tamana zaroor kerta hai

 

Yahee seedha raasta manzil per phonchnay ki zamant aur yahee phir  aglon ka tarreqaeyqaar bunta hai .

 

 

کہہ دو کہ میں تم سے اس  کی اجرت نہیں مانگتا، ہاں جو شخص چاہے اپنے پروردگار کی طرف جانے کا رستہ اختیار کرے (۵۷)

سُوۡرَةُ الفُرقان

 

 

 Aisay hee raasto ki zamanat quran Upney falsafey hidayat mein kuch is terha deta hai

 

 

 

ہم کو سیدھے رستے چلا (۶)

 ان لوگوں کے رستے جن پر تو اپنا فضل وکرم کرتا رہا نہ ان کے جن پر غصے ہوتا رہا اور نہ گمراہوں کے (۷) 

 

سُوۡرَةُ الفَاتِحَة 

 

 Aur  woh pakeeza loag phir kuch is terha inn raasto per chulnay ko khuda  ki naimat  aur us ki haqimiat ka iqrar kertay huay kehtay hain k

 

ہم تیری ہی عبادت کرتے ہیں اور تجھ ہی سے مدد مانگتے ہیں (۵) 
سُوۡرَةُ الفَاتِحَة 

 

 Iqrar  qurbat ki pehlee manzil hai aur qurbat manzil ki pehchaan.

 

Manzil ki sahee simt  hee sirf seedhay rastay say mansoob hua kerty hai

 

اے محمدﷺ) بےشک تم پیغمبروں میں سے ہو (۳)  

 

سُوۡرَةُ یسٓ

 

سیدھے رستے پر (۴)

 

 

سُوۡرَةُ یسٓ

خدا نے ان کو برگزیدہ کیا تھا اور سیدھی راہ پر چلایا تھا (۱۲۱)

 سُوۡرَةُ النّحل

 

 

 

 Yeh kon sa raasta hai jis ki simt  hee seedhay  raastay ki zamanat hai

 

 

اور تم اندھوں کوان کے الٹے راستے سے سیدھے راستہ پر نہیں لا سکتے تم تو بس انہیں لوگوں کو سنا سکتے ہو جو ہماری آیتوں پر ایمان لاتے ہیں سو وہی ماننے والے ہیں (۵۳)

سُوۡرَةُ الرُّوم

 

 

Yanee woh raasta jis ka ikhtitam pak perwerdegar kay naam aur uss tak pohunchnay ka wahid tarreq bana

 

 

(اے پیغمبر) اپنے پروردگار جلیل الشان کے نام کی تسبیح کرو (۱) جس نے بنایا پھر درست کیا (۲) اور جس نےاندازہ ٹہرایا  رستہ بتایا (۳)

 

سُوۡرَةُ الاٴعلی

 

 

Yahee seedha raasta her anay walay payghumber ka tareeq aur un ki ummat ka tareeqaeyqar raha.

 

 

کہہ دو کہ مجھے میرے پروردگار نے سیدھا رستہ دکھا دیا ہے  مذہب ابراہیم کا جو ایک  ہی کی طرف کے تھے اور مشرکوں میں سے نہ تھے (۱۶۱)

سُوۡرَةُ الاٴنعَام

 

 

 Raasto ki kahani Upney under yeh falsaf leay huay hai kay ub yeh raasta;  rasta dikhanay waalay ka mohtaj rahay ga

 

 

اور بےشک (اے محمدﷺ) تم سیدھا رستہ دکھاتے ہو (۵۲)

سُوۡرَةُ الشّوریٰ

(یعنی) خدا کا رستہ جو آسمانوں اور زمین کی سب چیزوں کا مالک ہے۔(۵۳)

سُوۡرَةُ الشّوریٰ

 

 Yahee wajah hai k insaan uss seedhay raastay per chulnay kay leay Payghumbero aur rasoola ka  ka mohtaaj  raha kio k  raasta wohee dikha sukta hai jis nay manzil dekhi ho

 

Insani wajood mein khuda  aur uss ki makhlooq k dermian rishta sirf rasool ki moujoodge hee ka taslasul hai  aur taabay hai

 

Aur yahee wajah hai kay madad bhee rasol hee ka zimma aur ikhtiyar.

 

 
ہم اپنے پیغمبروں کی اور جو لوگ ایمان لائے ہیں ان کی دنیا کی زندگی میں بھی مدد کرتے ہیں اور جس دن گواہ کھڑے ہوں گے (یعنی قیامت کو بھی) (۵۱)

سُوۡرَةُ المؤمن / غَافر

 

 

جب تم اپنے پروردگار سے فریاد کرتے تھے تو اس نے تمہاری دعا قبول کرلی  کہ  ہم ہزار فرشتوں سے جو ایک دوسرے کے پیچھے آتے جائیں گے تمہاری مدد کریں گے (۹) اور اس مدد کو خدا نے محض بشارت بنایا تھا کہ تمہارے دل سے اطمینان حاصل کریں۔

سُوۡرَةُ الاٴنفَال

 اور مدد تو الله ہی کی طرف سے ہے۔ بےشک خدا غالب حکمت والا ہے (۱۰)

سُوۡرَةُ الاٴنفَال

 

 Aaj Khyber ki jang k chaleesway roaz Rasool-e-Khuda(SAWAW) phir khuda ki madad ka tazkira kuch iss andaaz mein kertay hai k

 

“kul mein alm uss shaks ko doon ga jis ka haath per perwerdegar fatah naseeb keray ga ;jo khuda ko dost rukhta hai aur khuda bhee uss ko dost

 

 Aur phir tum nay kuch yoon dekha’

 

جب خدا کی مدد آ پہنچی اور فتح (حاصل ہو گئی) (۱)

سُوۡرَةُ النّصر
تو اپنے پروردگار کی تعریف کے ساتھ تسبیح کرو اور اس سے مغفرت مانگو، بے شک وہ معاف کرنے والا ہے (۳)

سُوۡرَةُ النّصر

 

Kitney ajeeb baat hai  jab Khyber shikun ki zaroorat perhay to e tum Ali Ko pukarao aur jab Kinaray  per kishtey lugay to us ki mehnat ka inkaar kerk munkiri say badal daalo

 

 Ali hee taqat-e-perwerdegar hai jis ki tajalle tum nay Khyber mein dekhy aur Ali hee woh talwaar hai jo Kaabay mein  Bazoay Risalat(SAWAW) per sawar hoker  budt shikun baney.

 

 Ya Allah madad tumhara falsafa nahee bulkay  Mola-e-kainaat ki asal taqat hai  aur ali hee ki zaban ki shahdat

 

Wahdaniyat k falsay mein gumrahee asal taqat kay rastay say hut jaanay ka naam hai

 

Ali hee zameen per asman mein busnay waalay ki woh taqut hai jisay yadullah aur sher-ekhuda say munsoob kiya gaya.

 

Ali hee who Zulfiqar hai jo taqut kay serchushmay ka waqar hai.

 

Ali hee who raasta hai jo bad-e-payghumber wahdaniyat k falsafay ka shahid aur risalat k mertaby aur taqut ka zamin.

 

 

تو تم اور تمہارا بھائی دونوں ہماری نشانیاں لے کر جاؤ اور میری یاد میں سستی نہ کرنا (۴۲)

 

سُوۡرَةُ طٰه

اور میرے گھر والوں میں سے میرا وزیر  مقرر فرما (۲۹)میرے بھائی ہارون کو (۳۰) اس سے میری قوت کو مضبوط فرما (۳۱) اور اسے میرے کام میں شریک کر (۳۲) تاکہ ہم تیری بہت سی تسبیح کریں (۳۳) اور تجھے کثرت سے یاد کریں (۳۴) تو ہم کو  دیکھ رہا ہے (۳۵) فرمایا موسیٰ تمہاری دعا قبول کی گئی (۳۶)

ہمارے ہاں بات بدلا نہیں کرتی اور ہم بندوں پر ظلم نہیں کیا کرتے (۲۹)

سُوۡرَةُ قٓ

 

 

Madad  uss pukaar k naam hai jis ko pukaarnay waala taqutwertareen say munssob keray

 

 

Ali hi taqut kay maidan mein taqatwer ki nishanee hai

 

 

اور خدا تمہارے (سمجھانے کے لئے) اپنی آیتیں کھول کھول کر بیان فرماتا ہے۔ اور خدا جاننے والا حکمت والا ہے (۱۸)

سُوۡرَةُ النُّور

 

“Mein Woh Hoon Jis ki Maa nay Uss ka Naam Haider Rukha”(Ali Mola)

 

Ya Ali Madad